انتہائی خطرے والے ممالک سے نیوزی لینڈ کے سفر پر پابندیاں | Restrictions on travel to New Zealand from very high-risk countries

28 اپریل 2021 کو رات 11:59 بجے سے کچھ ممالک سے نیوزی لینڈ آنے کے سفر پر پابندی ہوگی۔

حکومت نے کووڈ-19 کے ساتھ نیوزی لینڈ آنے والے افراد کی تعداد کو کم کرنے کے لئے انتہائی خطرے کے حامل ممالک کی ایک کیٹگری تشکیل دی ہے۔

28 اپریل 2021 کو رات 11:59 بجے سے انتہائی خطرے والے ممالک سے آنے والے مسافروں کو نیوزی لینڈ آنے کے لئے مخصوص معیاروں پر پورا اترنا ہوگا۔

حکومت اس فیصلے پر باقاعدگی سے نظرثانی کرے گی ، پہلی نظرثانی 7 مئی 2021 کو کی جائے گی۔

انتہائی خطرے والے ملک سے کیا مراد ہے؟

کسی ملک کو اس وقت انتہائی خطرے والا ملک سمجھا جاتا ہے جب:

  • 2021 میں اس ملک سے نیوزی لینڈ آنے والے ہر 1000 میں سے 50 سے زیادہ کووڈ-19 کیس نکلے ہیں، اور
  • وہاں سے ہر ماہ اوسطا 15 سے زیادہ مسافر آتے ہيں۔
     

اس کا اطلاق کن ممالک پر ہوگا؟

اس وقت درج ذیل ممالک کی انتہائی خطرے والے ممالک کے طور پر درجہ بندی کی گئی ہے:

  • برازیل
  • انڈیا
  • پاکستان
  • پاپوا نیو گنی 

یہ پابندیاں کیوں لگائی گئی ہیں؟

متعدد ممالک میں کووڈ-19 انفیکشنز بڑھتی ہی جارہی ہیں۔ وائرس کی نئی تبدیل شدہ شکلیں بھی ظاہر ہوئی ہیں۔

ان پابندیوں کے بغیر نیوزی لینڈ میں زیرانتظام تنہائی کی سہولیات میں کووڈ-19 کے مزید کیس دیکھے جانے کی توقع ہے۔ اس سے ہمارے سسٹم اور افرادی قوت پر اضافی دباؤ پڑے گا اور کمیونٹی میں وباء پھیلنے کا خطرہ بڑھ جائے گا۔

نیوزی لینڈ کی حکومت نے اس صورتحال پر قدم اٹھاتے ہوئے کچھ ممالک کے لئے انتہائی خطرے کی کیٹگری تشکیل دی ہے۔ اس سے نیوزی لینڈ میں کووڈ-19 لے کر آنے والے افراد کی تعداد میں نمایاں کمی آئے گی۔

انتہائی خطرے والے ملک سے ابھی بھی کون سفر کرسکتا ہے؟

آپ صرف اس صورت میں ہی انتہائی خطرے والے ملک سے نیوزی لینڈ آ سکتے ہیں، اگر آپ:

  • نیوزی لینڈ کے شہری ہیں
  • نیوزی لینڈ کے شہری کے شریک حیات یا اس پر انحصار کرنے والا ایک بچہ ہيں، یا
  • نیوزی لینڈ کے شہری بچوں کے والد\والدہ ہیں جن کا آپ پر انحصار ہے۔

نیوزی لینڈ کے شہریوں کے شریک حیات میں شوہر\بیوی، سول یونین پارٹنر یا ڈی فیکٹو پارٹنر شامل ہوسکتے ہیں۔

امیگریشن نیوزی لینڈ پر ان مزید وجوہات کے بارے میں جانیں جن کی وجہ سے آپ نیوزی لینڈ کا سفر کر سکتے ہيں (external link)

انتہائی خطرے والے ممالک سے کون نیوزی لینڈ کا سفر نہیں کر سکتا؟

رہائشی کلاس ویزا رکھنے والے افراد سمیت دیگر تمام مسافروں کے لئے ضروری ہے کہ وہ بذریعہ ہوائی سفر نیوزی لینڈ آنے سے پہلے کم از کم 14 دن انتہائی خطرے والے ممالک سے باہر گزاریں۔

انتہائی خطرے والے ملک سے ٹرانزٹ کی صورت میں 14 دنوں کے تقاضے کا اطلاق نہیں ہوتا۔

کچھ لوگوں کو چھوٹ مل سکتی ہے

انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر چھوٹ کا عمل دستیاب ہوگا۔ جو بھی شخص ان بنیادوں پر انتہائی خطرے والے ملک سے نیوزی لینڈ کا سفر کرنا چاہتا ہے اس کے پاس فعال ویزا ہونا ضروری ہے۔

انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر چھوٹ کے عمل کے بارے میں معلوم کریں۔ (external link)

 تمام مسافروں کے لئے روانگی سے قبل منفی ٹیسٹ ہونا ضروری ہے

انتہائی خطرے والے ممالک سے آنے والے تمام مسافروں کے پاس کسی منظور شدہ لیبارٹری سے منفی nasopharyngeal RT-PCR (PCR) ٹیسٹ ہونا ضروری ہے۔ ٹیسٹ روانگی سے قبل 72 گھنٹوں کے اندر لیا گیا ہو۔

سرکاری طور پر تسلیم شدہ لیبارٹریوں کی فہرست تلاش کریں (external link)

نیوزی لینڈ لوٹنے والے افراد کے لئے مشورہ

اپنی روانگی سے پہلے 14 دن کے دوران کچھ ایسی چیزيں ہیں جن پر آپ عمل کر کے اپنے آپ کو اور نیوزی لینڈ کے دیگر افراد کو محفوظ رکھ سکتے ہیں:

  • زیادہ خطرے والے اجتماعات میں جانے سے گریز کریں، جیسے پارٹیاں، سماجی اجتماعات یا رش والی جگہیں۔
  • ایسے لوگوں کے ساتھ رابطے سے گریز کریں جنہیں کووڈ-19 ہو یا جو کووڈ-19 والے افراد کے ساتھ قریبی واسطے میں رہے ہوں۔
  • دوسرے لوگوں کے ساتھ اپنا رابطہ محدود کرنے کے لئے جتنا ممکن ہو سکے گھر میں رہیں۔
  • اپنے ہاتھوں کو وقتا فوقتا دھوئیں اور خشک کریں، اپنی کہنی میں کھانسیں اور اپنے چہرے کو چھونے سے گریز کریں۔
  • ان لوگوں سے اپنا فاصلہ رکھیں جنہیں آپ نہیں جانتے ہیں۔
  • اگر آپ دوسروں سے فاصلہ برقرار نہ رکھ سکیں تو چہرہ ڈھانپ کر رکھیں۔