نیوزی لینڈ کا سفر کرنے والوں کے لئے روانگی سے قبل ٹیسٹ | Pre-departure testing for travellers to New Zealand

وائرس کو نیوزی لینڈ سے باہر روکے رکھنا ہی ہمارا سب سے بڑا بچاؤ ہے۔ 25 جنوری 2021 کو رات 11:59 بجے سے نیوزی لینڈ آنے والے تمام مسافروں کو روانگی سے 72 گھنٹے قبل COVID-19 کا ٹیسٹ کروانا ہوگا۔ اس ٹیسٹ کا نتیجہ منفی ہونا چاہئے اور اس کے ہمراہ لیبارٹری سرٹیفیکیٹ یا کوئی اور منظورشدہ ثبوت فراہم کرنا ہوگا۔

کم خطرے والے ممالک روانگی سے قبل اس ٹیسٹ سے مستثنی ہیں۔ ان میں آسٹریلیا، انٹارکٹیکا، کک آئی لینڈز، فیڈریٹڈ اسٹیٹس آف مائیکرونیشیا، کریباتی، مارشل آئی لینڈز، ناؤرو، نیو کیلی ڈونیا، Niue، پالاؤ، سمووا، سولومن آئی لینڈز، Tokelau، ٹونگا، Tuvalu، وانواٹو اور شامل ہيں۔

زیادہ خطرے والے ممالک سے روانگی سے قبل ٹیسٹ کروانے کے حوالے سے تمام PCR ٹیسٹ، LAMP اور وائرل اینٹیجن ٹیسٹ قابل قبول ہيں۔

بہت زیادہ خطرے والے ممالک سے آنے والے مسافروں کے پاس ایک تصدیق شدہ لیبارٹری سے nasopharangeal RT-PCR (PCR) ٹیسٹ کا منفی نتیجہ ہونا چاہئے۔ یہ ٹیسٹ روانگی سے قبل 72 گھنٹوں کے دوران کروایا جانا چاہئے۔

بہت زیادہ خطرے والے ممالک کے بارے میں مزید جانیے۔

روانگی سے قبل کروائے جانے والے ٹیسٹوں کے عمومی تقاضے

غیرملکی زبانوں میں طبّی سرٹیفیکیٹ قابل قبول ہیں۔ ان کا انگریزی ترجمہ ہونا ضروری ہے۔

دوسال (24 ماہ) سے کم عمر بچوں کو روانگی سے قبل ٹیسٹ کروانے سے استثنا حاصل ہے۔

ایسے مسافروں کو روانگی سے قبل ٹیسٹ کروانے سے استثنا حاصل ہے جن کے پاس ایک طبّی سرٹیفیکیٹ ہو جس میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہو کہ وہ COVID-19 سے صحتیاب ہوچکے ہیں اور اب ان سے انفیکشن بھیلنے کا خطرہ نہیں ہے۔

ایسے مسافر جو طبّی وجوہات کی بناء پر ٹیسٹ نہیں کروا سکتے انہیں چاہئے کہ وہ اپنی روانگی سے قبل 72 گھنٹوں کے اندر اندر ایک میڈیکل پریکٹشنر سے ملیں۔ انہیں میڈیکل پریکٹشنر سے ایک طبّی سرٹیفیکیٹ حاصل کرنا ہوگا جس میں یہ بتایا گیا ہو کہ وہ طبّی وجوہات کی بناء پر ٹیسٹ نہيں کروا سکتے اور انہيں COVID-19کی علامات نہیں ہیں۔

ایسے مسافروں کو بھی روانگی سے قبل ٹیسٹ کروانے کی ضرورت نہيں ہے جو براستہ نیوزی لینڈ کسی اور ملک کا سفر کر رہے ہیں اور وہ پاسپورٹ کنٹرول سے باہر نہیں آتے۔

مسافروں کو پرزور مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اپنی ایئرلائن\ایئرلائنوں سے ٹیسٹنگ کے اضافی تقاضوں کے حوالے سے معلوم کرلیں۔ انہيں اس بات کا بھی مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ ان ممالک کے تقاضوں کے بارے میں بھی معلومات حاصل کرلیں جن سے وہ گزریں گے۔

8 فروری سے نیوزی لینڈ آنے والے ایسے تمام مسافروں (ماسوائے استثنا کے حامل ممالک سے آنے والے مسافر) کو $1,000 تک کا جرمانہ ہو سکتا ہے جن کے پاس COVID-19 کے منفی نتیجے کا ثبوت یا طبّی سرٹیفیکیٹ نہ ہوا۔

نیوزی لینڈ کا سفر کرنے والے افراد کے لئے ڈے زیرو ٹیسٹنگ کی شرائط

قرنطینہ کی ضرورت نہ ہونے والے سفری انتظامات کے تحت آنے والے مسافروں کے علاوہ نیوزی لینڈ پہنچنے والے تمام مسافروں کے لئے ضروری ہے کہ وہ:

  • ہمارے 14 دنوں پر مشتمل منظم تنہائی اور قرنطینہ کے عمل سے گزریں
  • منظم تنہائی کی رہائشی سہولیات میں پہلی مرتبہ داخل ہوتے وقت اسی دن (ڈے زیرو) COVID-19 ٹیسٹ کروائيں
  • اس ٹیسٹ کا نتیجہ آنے تک اپنے کمرے میں ہی ٹھہریں
  • اگر آمد کے وقت انہيں کسی قسم کی علامات ہوئيں تو انہيں سیدھا قرنطینہ کی سہولیات میں لے جایا جائے گا۔

یہ ناک کا PCR سویب (swab) ہوگا۔

ٹیسٹ کے نتائج میں عام طور پر 24 سے 48 گھنٹے لگتے ہیں۔

اگر یہ ٹیسٹ منفی ہوا تو لوگ اپنی 14 دن کی منظم تنہائی کا باقی عرصہ معمول کے مطابق گزاریں گے۔ انہیں اپنے قیام کے تقریبا تیسرے دن اور اس بعد تقریبا بارہویں دن مزید ٹیسٹ کروانے کی ضرورت ہوگی۔ تقریباً تمام صورتوں میں، انہیں جانے سے پہلے ایک منفی COVID-19 ٹیسٹ اور ہماری صحت کی ٹیم سے اس بات کی تصدیق درکار ہوگی کہ انہیں COVID-19 ہونے یا ان سے کسی اور کو COVID-19 منتقل کرنے کا خطرہ کم ہے۔

اگر نتیجہ مثبت ہوا تو اس شخص کو قرنطینہ کی سہولت میں منتقل کردیا جائے گا، یہ منتقلی ڈے زیرو ٹیسٹ نہ ہونے کی صورتحال کے برعکس پہلے ہوجائے گی۔

قرنطینہ کی ضرورت نہ ہونے والے سفری انتظامات کے بارے میں مزید جانیں

مزید معلومات 

COVID-19 کے بارے میں تازہ ترین معلومات کے لئے براہ مہربانی یہاں جائیں: https://covid19.govt.nz/updates-and-resources/translations/

منظم تنہائی اور قرنطینہ کے بارے میں مزید معلومات کے لئے براہ مہربانی یہاں جائیں: https://www.miq.govt.nz/travel-to-new-zealand/arriving-in-nz/ (external link)

Last updated: