ویکسین کا جائزہ | Vaccine overview

محفوظ اور مؤثر ویکسینز اس چیز کا ایک لازمی حصہ ہیں کہ ہم نیوزی لینڈ اور اپنے پیسیفک ہمسایہ ممالک کوCOVID-19 سے کیسے بچاتے ہیں۔ ویکسینز ہماری معاشی بحالی اور اپنی سرحدوں کو دوبارہ کھولنے کے لئے بھی اہم ہوں گی۔

COVID-19 ویکسینز مفت لگائی جائيں گی. یہ نیوزی لینڈ کے عوام کیلئے لازمی نہیں ہوں گی۔

COVID-19 ویکسینز وائرس سے مستقبل میں تحفظ فراہم کریں گی۔ لیکن ہم سب کو COVID-19 کو اپنی کمیونٹیوں سے باہر رکھنے میں اپنا کردار ادا کرتے رہنا ہے۔ ہمیں چار سنہری اصولوں پر عملدرآمد جاری رکھنا ہے: ہاتھ دھونا، QR کوڈز اسکین کرنا، بلیوٹوتھ آن کرنا اور بیمار ہونے کی صورت میں گھر پر رہنا۔

COVID-19 کے خلاف اپنی لڑائی کے اس نئے مرحلے میں داخل ہونے کے دوران منظور شدہ ذرائع سے معلومات حاصل کرنا پہلے سے کہیں زیادہ ضروری ہے۔ غلط معلومات ایک ایسے وقت میں ہمارے خلاف کام کرتی ہیں جب کہ ہمیں وائرس کو شکست دینے کے لئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ آپ کو ان ذرائع سے قابل اعتماد معلومات مل سکتی ہیں؛ آپ کا ڈاکٹر، ہیلتھ لائن، آپ کا ضلعی ہیلتھ بورڈ، وزارت صحت اور Unite Against Covid-19 کی ویب سائٹ، www.covid19.govt.nz

یہ یقینی بنانا کہ نیوزی لینڈ کی COVID-19 ویکسین محفوظ ہے

Medsafe نے Pfizer/BioNTech ویکسین کا جائزہ لے کر نیوزی لینڈ میں اسے استعمال کرنے کی منظوری دی ہے۔ Medsafe نیوزی لینڈ کا خودمختار میڈیکل ریگولیٹر ہے۔ یہ تمام نئی ادویات، بشمول ویکسینز کی درخواستوں کا جائزہ لیتا ہے۔ اس سے پہلے کہ ویکسینز کو نیوزی لینڈ میں منظور اور استعمال کیا جا سکے یہ ضروری ہے کہ ویکسینز بین الاقوامی معیار اور کوالٹی، حفاظت اور افادیت کے حوالے سے مقامی ضروریات پر پورا اترتی ہوں۔

COVID-19 ویکسینز لگانے کا پروگرام

حکومت نے پورے ملک اور بحرالکاہل میں اپنے ہمسایوں کے لئے Pfizer/BioNTech ویکسین کی فراہمی کا انتظام کیا ہے۔ نیوزی لینڈ کو Pfizer/BioNTech ویکسین کی کل 10 ملین خوراکیں فراہم کی جائیں گی۔ یہ 5 ملین افراد کے لئے کافی ہیں جنہیں COVID-19 کے خلاف دو خوراکیں فی کس درکار ہیں۔

نیوزی لینڈ میں موجود ہر فرد، اپنے ویزے یا شہریت کی صورتحال سے قطع نظر، مفت ویکسین لگوانے کا اہل ہے۔ کسی بھی قسم کی اکٹھی کی جانے والی معلومات امیگریشن کے مقاصد کے لئے استعمال نہيں کی جائیں گی۔

وزارت صحت ویکسینز کی منصفانہ تقسیم کو یقینی بنانے کے لئے ایک منصوبہ ترتیب دے رہی ہے۔ ایسے لوگوں کو ترجیح دی جائے گی جنہيں COVID-19 کا زیادہ خطرہ لاحق ہے، جیسے بارڈر پر کام کرنے والے کارکن، صحت کے کارکن، Māori، پیسفک افراد، معمر افراد اور معذور افراد۔

سرحد پر اور زیرانتظام تنہائی اور قرنطینہ (Managed Isolation and Quarantine - MIQ) کی سہولیات میں کام کرنے والے کارکنوں کو سب سے پہلے ویکسین دی جائے گی۔ ایسا اس لئے کیا جائے گا کیونکہ وہ COVID-19 کو نیوزی لینڈ سے باہر رکھنے کے سلسلے میں نہایت اہم کردار ادا کر رہے ہيں۔ اس میں MIQ میں صفائی کرنے والے کارکن، MIQ میں صحت چیک کرنے والی نرسیں، سکیورٹی کا عملہ، کسٹم اور بارڈر کا عملہ، ایئرلائنز کا عملہ اور ہوٹل کے کارکن اور اس کے علاوہ دیگر متعلقہ افراد شامل ہيں۔ یہ افراد جن لوگوں کے ساتھ رہتے ہیں وہ لوگ بھی ویکسین لگوانے کے لئے قطار میں سب سے آگے ہوں گے۔

Medsafe نے درج ذیل ہدایات کے تحت Pfizer/BioNTech ویکسین کے استعمال کی منظوری دے دی ہے:

  • ویکسین 16 سال یا اس سے زیادہ عمر کے لوگوں کے لئے منظورشدہ ہے۔
  • حاملہ خواتین کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اپنے ڈاکٹر سے ویکسین لگوانے کے خطرات اور فوائد کے بارے میں بات کریں۔
  • دودھ پلانے والی خواتین کے لئے ویکسین کا استعمال موزوں ہے۔
  • Keytruda، Opdivo، Yervoy اور Tecentriq سمیت مخصوص تھراپیاں کروانے والے افراد کوچاہئے کہ وہ Pfizer mRNA COVID-19 ویکسین استعمال کرنے سے پہلے اپنے ماہر صحت سے مشورہ کر لیں۔
  • ویکسین لگوانے والے افراد کو متوقع عام ضمنی اثرات کے بارے میں معلومات فراہم کی جائیں گی، مثال کے طور پر بخار، پٹھوں میں درد اور تھکاوٹ۔
  • ویکسین لگوانے کے بعد 20 منٹ تک زیرنگرانی رہنے کی ضرورت ہ

نیوزی لینڈ میں ویکسین لگائے جانے کی ترتیب کے بارے میں مزید معلومات کے لئے یہاں کلک کریں

ویکسین لگواتے وقت کس چیز کی توقع کی جائے، اس کے بارے میں معلومات کے لئے یہاں کلک کریں

حفاظتی ویکسین لگنے کے بعد کیا متوقع ہے، اس بارے میں معلومات کے لئے یہاں کلک کریں

ویکسین کے ہماری سرحدوں پر اثرات

اس بات کو سمجھنا ابھی قبل از وقت ہے کہ نیوزی لینڈ میں اور بین الاقوامی سطح پر ویکسینز کی دستیابی ہمارے سرحدی کنٹرول میں ہونے والی کسی تبدیلی کو کیسے متاثر کرے گی۔

محققین اس بات کی تصدیق کرنے کے لئے کام کر رہے ہیں کہ آیا کوئی ایسا شخص، جسے ویکسین لگ چکی ہے، ابھی بھی وائرس کو ایک جگہ سے دوسری جگہ لے جا سکتا ہے اور COVID-19 کسی اور شخص کو منتقل کرسکتا ہے۔ ٹھوس معلومات حاصل ہونے تک ہمیں اپنی سرحد کی موجودہ صورتحال کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔

Last updated: